• معاملات >> بیع و تجارت

    سوال نمبر: 605191

    عنوان:

    کمپنی ملازم کا کٹیشن (تخمینہ) لیے بغیر تجارت میں شریک دوست سے کمپنی کے لیے مال خریدنا؟

    سوال:

    کمپنی کے ملازم زید کے ذمہ ہے کہ وہ مختلف لوگوں سے ریٹ لے کر کمپنی کے لئے مناسب قیمت پر مال خریدے ۔اب زید اپنے دوست سے کہتا ہے کہ تم کمپنی کو مطلوبہ مال مناسب قیمت پر مہیا کرو اس کا مقصد یہ ہے کہ کمپنی کا بھی فائدہ ہو اور دوست کا بھی۔

    1) اب سوال یہ ہے کہ اس طرح دوست کو نفع پہنچانا جائز ہے ؟ دوسرا سوال: یہی ملازم زید کمپنی کے علم میں لائے بغیر اپنے دوست کو تیار کرتا ہے کہ وہ کمپنی کا مطلوبہ مال خریدے اور اس خریدنے میں پیسہ دونوں کا لگتا ہے دوست کا بھی اور اس زید کا بھی بعد میں یہی مال کمپنی کو بذریعہ زید مناسب قیمت میں بیچ دیا جاتا ہے اور نفع زید اور دوست آپس میں طے شدہ فیصد میں تقسیم کر لیتے ہیں۔

    2) اب سوال یہ ہے کہ کمپنی ملازم زید کا اس طرح چھپ کر نفع حاصل کرنا ٹھیک ہے ؟

    جواب نمبر: 605191

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:1138-966/B=2/1443

     (۱) اگر زید کا دوست مناسب قیمت پر کمپنی کو مال مہیا کرے، عام ریٹ کے مقابلے میں زید کے دوست کا ریٹ زیادہ نہ ہو تو زید اپنے دوست کے ذریعے میں بھی کمپنی کو مال مہیا کراسکتا ہے، ہاں اگر زید کے پیش نظر محض دوست کو نفع پہنچانا ہو، وہ مختلف جگہوں سے ریٹ کی کوئی تحقیق نہ کرے تو یہ زید کی خیانت سمجھی جائے گی۔

    (۲) زید کا اس طرح چھپ کر نفع کمانا جائز نہیں ہے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند