• معاملات >> بیع و تجارت

    سوال نمبر: 602166

    عنوان:

    انكم ٹیكس سے بچنے كے لیے مال چھپانا؟

    سوال:

    استفتاء در اصل یہ ہے کہ میں ایک تاجر آدمی ہوں میرا بڑی گاڑیوں کے ٹائر اور ٹیوب کا کاروبارِ ہے اس میں بڑی مالیت کے GST بل بنتے ہیں ( جس کا GST میں سرکار کو مال خریدتے وقت ادا کر چکا ہوں) بہت سے گاھک بل کی مانگ کرتے ہیں ۔ لیکن بہت سے گاہک ایسے بھی ہیں ہیں جو بل کو چھوڑ کر چلے جاتے ہیں ہم ان بلوں کو پھاڑ کر دسٹ بین کے اندر ڈال دیتے ہیں ایک صاحب ہیں جو سرکاری روڈ کا ٹھیکہ لیتے ہیں جن میں باضابطہ بڑی گاڑیوں کا استعمال ہوتا ہے اور ان کے ٹائر ٹیوب کا استعمال ہوتا ہے ہے وہ یہ بل ہم سے مانگ لیتے ہیں تاکہ اسکے ذریعے ان بلوں کی جتنی مالیت کا ٹیکس ہے اُسے سرکار سے ایڈجسٹ کیا جاسکے یعنی اُنہیں جو سرکار کو ٹیکس دینا ہے اسمیں یہ بل لگاکر ٹیکس ایڈجسٹ کیا جاسکے اسکے عوض وہ مجھے 1500 روپے پر بل دیتے ہیں تو کیا میرا اُنہیں اسطرح کے بل دینا جائز ہے یا نہیں یا مجھے بدستور پھاڑ کر پھینک دینا چاہیے نیز کیا وہ اسطرح کے بل لگا کر سرکار سے ٹیکس ایڈجسٹ کر سکتے ہیں براہِ مہربانی جواب مرحمت فرماکر شکریہ کا موقع عنایت فرمائیں ۔

    جواب نمبر: 602166

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 466-440/B=07/1442

     انکم ٹیکس غیر شرعی ٹیکس ہے، لہٰذا اس سے بچنے کے لئے مال چھپانے کی گنجائش ہے۔ رہا جعلی بلوں کے ذریعہ انکم ٹیکس بچانا اس کے لئے آپ اپنے یہاں کے مقامی مفتیان کرام سے رجوع کریں وہ تمام صورت حال کی تحقیق کرکے اس کا حل بتائیں گے۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند