• عقائد و ایمانیات >> تقلید ائمہ ومسالک

    سوال نمبر: 177096

    عنوان: إذاکان الزوجان مختلفی المذہب فکیف یعمل الأولاد بالأحکام الشرعیة

    سوال: اذا کان اختلاف بین الزوجین فی مذاہب الفقہیة فتعمل الزوجة حسب مذہبہا و الزوج حسب مذہبہا فماذا عن اولادہم مثلا یصلی احیانا بطریقة حنفیة لانہ رأی امہ تصلی ہکذا، وبعض الاحیان یصلی بطریقة ابیہ حنبلی لانہ رأی ابیہ یصلی بہذہ الطریقة ، وہکذا فی لاحکام الفقہیہ غیرہا ؟

    جواب نمبر: 17709601-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:686-632/SN=sn/1441

    لِما أن الأب ولیّ لأولادہ یجب علیہ أن یرشد أولادہ إلی طریقة الصلاة فی مذہب فقہیّ یعتقدہ صوابا بعلمہ- إذا کان عالما ضلیعا- أو بعد ما سأل العلماء المحلیین المعتبرین إذا لم یکن عالما ، فیعمل الأولاد بہا، فقد قال اللہ تبارک وتعالی : وَأْمُرْ أَہْلَکَ بِالصَّلَاةِ وَاصْطَبِرْ عَلَیْہَا (طہ: 132) وکما ینبغی للأب أن یؤکّد أم أولادہ أن ترشد إلی الطریقة نفسہا التی أرشد إلیہا ہو بنفسہ. وعِلْما بأن النکاح بین زوحین یختلف مذہبہما الفقہی وإن کان جائزا إلا أنہ لاینبغی ذلک لمثل ہذہ الأمور.


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند