• عبادات >> صوم (روزہ )

    سوال نمبر: 171475

    عنوان: اگر دخول میں شک ہو اور غلبہ ظن سے کوئی ایک پہلو راجح نہ ہو تو كفارہ ہے یا نہیں؟

    سوال: مفتیان کرام کے خدمت میں سلام عرض کرتا ہوں، میرا سوال یہ ہے کہ کی سال پہلے ايک رمضان میں اگر بکر نے اپنے بیوی کے ساتھ ہمبستری کی 3 یا 4 دفعہ مگر پہلی دفعہ کا یاد ہے کہ دخول نہیں ہوا باقی کا یاد نہیں کہ ہوا ہے کہ نہیں قضا کے روزے دونوں رکھ چکے ہیں اس صورت کفارہ کا کیا حکم ہے جب اسے یا د نہیں کہ دخول ہوا ہے کہ نہیں اور بیوی کو بھی یاد نہیں ۔ براے مہربانی رہنمائی کریں اللہ جزائے، خیر دے امین۔

    جواب نمبر: 17147501-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:1350-1154/L=11/1440

    اگر دخول میں شک ہو اور غلبہ ظن سے کوئی ایک پہلو راجح نہ ہو تو صورتِ مسئولہ میں کفارہ کا حکم نہ ہوگا اوراگر اس عمل سے انزال نہ ہوا ہو تو قضا کابھی حکم نہیں ؛لیکن روزہ کی حالت میں ان چیزوں سے بچناضروری ہے ۔

    قَاعِدَةٌ مَنْ شَکَّ ہَلْ فَعَلَ شَیْئًا أَمْ لَا؟ فَالْأَصْلُ أَنَّہُ لَمْ یَفْعَلْ (الأشباہ والنظائر لابن نجیم ص: 50،الناشر: دار الکتب العلمیة، بیروت - لبنان)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند