• عبادات >> ذبیحہ وقربانی

    سوال نمبر: 848

    عنوان:

    ایک شخص ایک گائے سے عقیقہ کرنا چاہتا ہے ، تو کیا وہ گائے کو سات حصوں میں تقسیم کرکے ایک حصہ کو عقیقہ مان کر بقیہ چھ حصص کو فروخت کرسکتا ہے؟

    سوال:

    درج ذیل مسئلہ کے سلسلے میں علمائے اسلام کیا فرماتے ہیں کہ ایک شخص ایک گائے سے عقیقہ کرنا چاہتا ہے ، تو کیا وہ گائے کو سات حصوں میں تقسیم کرکے ایک حصہ کو عقیقہ مان کر بقیہ چھ حصص کو فروخت کرسکتا ہے؟

    جواب نمبر: 84801-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    (فتوى: 256/د=248/د)

     

    پوری گائے کوعقیقہ میں ذبح کردے تو جائز ہے بلکہ بہتر ہے، مگر اس کے ایک حصہ کو عقیقہ قرار دینا اور باقی کو فروخت کرنا درست نہیں ہے۔ عقیقہ صحیح نہیں ہوگا۔ قال في الدر: وإن کان شریك الستة نصرانیا أو مرید اللحم لم یجز عن واحد (شامي: ۲۲۹)


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند