• عقائد و ایمانیات >> حدیث و سنت

    سوال نمبر: 167638

    عنوان: خراب السند من الھند وخراب الھند من الصین کی تحقیق

    سوال: خراب اسند من الہند وخراب الہند من الصین کیا ایسی کوئی حدیث موجود ہے ؟

    جواب نمبر: 16763801-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa:408-344/N=5/1440

    امام ابو عبد اللہ قرطبینے اپنی کتاب: التذکرہ ( باب ما جاء في خراب الأرض والبلاد قبل الشام الخ، ص:۱۳۴۹، مطبوعہ: مکتبة دار المنھاج للنشر والتوزیع، الریاض) میں حضرت حذیفہ بن الیمانسے مروی ایک طویل مرفوع حدیث ذکر فرمائی ہے ، اس میں یہ الفاظ بھی آئے ہیں: خراب السند من الھند وخراب الھند من الصین؛ لیکن علامہ نے اس کی کوئی سند ذکر نہیں کی ہے؛ بلکہ علامہ نے یہ حدیث علامہ ابن الجوزیکی روضة المشتاق کے حوالہ سے روي صیغہ تضعیف کے ساتھ نقل فرمائی ہے؛ اس لیے بہ ظاہر یہ حدیث ضعیف ہے اور صحیح تحقیق سند معلوم ہونے کے بعد ہی ہوسکتی ہے، اور تا دم تحریر احقر کو تلاش وجستجو کے باوجود علامہ ابن الجوزی کی کتاب: روضة المشاق دستیاب نہیں ہوسکی۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند