• عقائد و ایمانیات >> حدیث و سنت

    سوال نمبر: 167245

    عنوان: ’’ہم نے پہلے ایمان سیكھا پھر قرآن سیكھا‘‘ كیا اس مضمون كی كوئی روایت موجود ہے؟

    سوال: ہم اکثر بیان میں کہتے اور سنتے ہیں کہ صحابہ فرماتے ہیں کہ ہم نے پہلے ایمان سیکھا پھر قرآن سیکھا، اس حدیث کے راوی کون ہیں؟

    جواب نمبر: 16724501-Sep-2020 : تاریخ اشاعت

    بسم الله الرحمن الرحيم

    Fatwa : 332-372/SN=05/1440

    جندب بن عبداللہ نامی صحابی رسول سے اس مضمون کی روایت ابن ماجہ (رقم : ۶۱، باب فی الایمان ) طبرانی کی معجم کبیر اور بیہقی وغیرہ میں آئی ہے، شراحِ حدیث نے اس روایت سے یہ اخذ کیا ہے کہ قرآن کریم اور فقہ سے پہلے عقائد اور ضروری مسائل کی تعلیم دی جانی چاہئے۔ ثم تعلّمنا الخ استفید منہ أن تعلّم علم العقائد قبل تعلم الفقہ والقرآن (شرح سنن ابن ماجة للسیوطي ، ص: ۷، ط: کراجی) ۔


    واللہ تعالیٰ اعلم


    دارالافتاء،
    دارالعلوم دیوبند