• Prayers & Duties >> Salah (Prayer)

    Question ID: 179702Country: India

    Title: نماز میں ہنسے كا وسوسہ آنا

    Question: (۱) کچھ دنوں سے مجھے ایسا محسوس ہورہاہے جیسے میں نماز میں ہنس رہاہوں، میں یہ فرق نہیں کرپا رہا ہوں کہ یہ شیطانی وسوسہ ہے یا واقعتا میں ہنس رہا ہوں، نماز کے لیے ہاتھ اٹھانے کے وقت سے ہی یہ بات میں ذہن میں رہتی ہے کہ میں ہنس رہاہوں ، یا ہنسنے والا ہوں اور نماز میں میرے خشوع و خضوع میں کمی آجاتی ہے۔ کبھی کبھار میں جب میں خاموشی سے نماز پڑھتاہوں تو میری آواز کم زیادہ ہوتی ہے اور پھر فوراً میرے ذہن میں آتاہے کہ میں ہنسی کو روکنے کی کوشش رہا ہوں، اس لیے اچانک میری آواز کم زیادہ ہوجاتی ہے، اور فکر ہونے لگتی ہے کہ میری نماز ہوئی یا نہیں، نیز مجھے دوسری سنت نماز پڑھنے میں یا قرآن کریم کو چھونے میں ڈر لگتاہے یہ سوچ کر کہ میرا وضو ہے یا نہیں۔ (۲) ایک مرتبہ نماز کے لیے وضو کرتے وقت مجھے خروج ریاح کا احسا ہوا ، مگر میں نے اپنا وضو جاری رکھا ، لیکن نماز نہیں پڑھی، دوسرے دن ظہر کی نماز کے لیے وضو کرتے وقت پھر ایسا ہی محسوس ہوا ، مگر میں نے سوچا کہ میرے ساتھ یہ شیطانی حرکت ہے، اور پھر میں نے نماز پڑھ لی۔ تب سے وضو کرتے وقت یا نماز پڑھتے مجھے ریح خارج ہونے کا احساس ہوتاہے ۔ براہ کرم، رہنمائی فرمائیں

    Answer ID: 179702Posted on: 26-Sep-2020

    Fatwa : 56-8T/B=02/1442

     اگر محض خیالات اور وسوسے تک یہ بات ہے تو یہ معاف ہے۔ اور اگر آواز کم زیادہ ہونے میں آپ کو ہنسنے کی آواز سنائی دیتی ہو تو اس صورت میں نماز نہ ہوگی، دوبارہ نماز پڑھنی ہوگی۔ اور اگر اتنی زیادہ تیز آواز ہوئی کہ آپ کے برابر والے نے بھی سن لی، تو اس صورت میں نماز اور وضو دونوں ٹوٹ جائیں گے۔ نیا وضو کرکے دوبارہ نماز پڑھنی ہوگی۔

    (۲) یہ محض شیطانی وہم معلوم ہوتا ہے، آپ وضو کرکے نماز پڑھ لیا کریں، وساوس اور اوھام کے باوجود بھی آپ کی نماز ہو جائے گی۔

    Darul Ifta,

    Darul Uloom Deoband, India