• Transactions & Dealings >> Interest & Insurance

    Question ID: 400102Country: India

    Title: ایف ڈی اور ڈپوزٹ پر بینک سے ملنے والا انٹریسٹ حرام کیوں ہے؟

    Question: میرے باس آشو گفتا (غیر مسلم) نے مجھ سے کہا کہ ایف ڈی اور ڈپوزٹ پر بینک سے ملنے والا انٹریسٹ حرام کیوں ہے؟میرے پاس کوئی معقول جواب نہیں ہے، براہ کرم، شریعت کی روشنی میں مناسب جواب دیں۔

    Answer ID: 400102Posted on: 16-Dec-2020

    Fatwa:315-233/sd=4/1442

     ایف ڈی اور ڈپوزٹ پر بینک سے انٹرسٹ کے نام سے جو رقم ملتی ہے ، شریعت کی رو سے اس پر سود کی حقیقت صادق آتی ہے اور اسلام میں سود کو حرام قرار دیا گیا ہے ،اس سلسلے میں قرآن کریم کی صریح آیت موجود ہے ، ایک مسلمان کی بندگی کا تو تقاضا یہ ہے کہ وہ شریعت کے حکم کو بغیر کسی دلیل و حکمت کے قبول کرے ، باقی اگر کوئی شخص عقلی دلائل سمجھنا چاہتا ہے ، تو سود کی حرمت کے عقلی دلائل اور اقتصادی نظام میں سود کی تباہ کاریاں ؛ اس موضوع پر بھی مستند اہل علم کی مفصل تحریریں موجود ہیں، مثلا: اسلام اور جدید معاشی مسائل ( افادات: مفتی محمد تقی عثمانی مد ظلہ ) کی چھٹی جلد ملاحظہ فرمائیں، اس میں بہت مفصل اور مدلل انداز میں سود کے حرام ہونے کے عقلی دلائل بیان کیے گئے ہیں، آپ اپنے باس کو کسی عالم کے ذریعے اس کتاب کا متعلقہ حصہ پڑھ کر سنوا سکتے ہیں ۔

    Darul Ifta,

    Darul Uloom Deoband, India