عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 173003

قرض خواہ قرض دار کا قرض اپنی زکوٰة سے قرض دار کو حوالہ کیے بغیر وصول کر سکتا ہے؟ اگر اس طرح نہیں دے سکتا ہے کیا صورت ہوگی؟ جواب دے کر عند اللہ ماجور ہوں۔

Published on: Sep 12, 2019

جواب # 173003

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1431-1167/B=01/1441



زکاة کی ادائیگی کے لئے تملیک شرط ہے یعنی کسی مستحق زکاة کو دے کر اس کا مالک بنانا ضروری ہے، اس کے بغیر زکاة ادا نہ ہوگی۔ قرض خواہ کو چاہئے کہ وہ زکاة کی نیت سے قرض دار کو رقم دے کر اسے مالک و مختار بنادے۔ پھر اس سے کہے کہ آپ اس رقم سے میرا قرض ادا کردیں۔ پھر وہ رقم اپنے قرض میں قرض خواہ کو دیدے تو اس طرح زکاة بھی ادا ہو جائے گی اور قرض بھی ادا ہو جائے گا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات