عبادات - زکاة و صدقات

Indian

سوال # 170461

ہمارے گاؤں کا نام ملک پور ضلع ہاپوڑ ، یوپی ہے، گاؤں میں مسلمان گھر چالیس ہیں اور گاؤں کے لوگوں کی حیثیت کمزور ہے، ہمارے گاؤں میں دینی تعلیم کے لیے جگہ تو ہے پر بنا ہوا نہیں ہے، سوال یہ ہے کہ کیا اسے بنوانے کے لیے زکاة کا پیسہ استعمال کرسکتے ہیں یا نہیں؟ شکریہ

Published on: May 13, 2019

جواب # 170461

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1025-869/H=09/1440



مکتب کے بنوانے میں زکاة استعمال کرنا جائز نہیں ہے ہٰکذا فی اول کتاب الزکاة من الفتاوی الہندیہ امداد کی مدد سے گاوٴں کے لوگ جس قدر انتظام کر سکتے ہوں اتنا کرکے تعلیم شروع کرادیں مگر صدقات واجبہ زکاة وغیرہ اس جگہ پر عمارت بنوانے میں صرف نہ کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات