عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 165627

میری نند کی بہت جلد شادی ہونے والی ہے جس میں زیادہ تر میرے اپنے پیسے خرچ ہوں گے،جب کہ وہ خود کماتی ہے اور اس کی سالانہ انکم ڈیڑھ لاکھ کے قریب ہے، میں یہ جاننا چاہتی ہوں کہ صدقہ اور زکاة کی شکل میں اس شادی میں پیسہ خرچ کرنا ممکن ہے؟ اس کے گھروالوں کی جائیداد میں زمین ہے، وہ میرے شوہر کی بہن ہے اور خرچ تقریبا سات آٹھ لاکھ روپئے کا ہے۔

Published on: Oct 28, 2018

جواب # 165627

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:146-120/L=2/140



اگر آپ کی نند مالدار ہے یعنی سونا ،چاندی، نقدی، حاجتِ اصلیہ سے زائد سامان وغیرہ میں سے کل یا بعض(بشرطیکہ صرف سونا نہ ہو) اتنی مقدار میں ہیں کہ جن کی مالیت ۶۱۲گرام ۳۶۰ملی گرام چاندی کی مالیت کو پہونچ جاتی ہے تو ان کوزکوة یا دیگر صدقاتِ واجبہ کی رقم دینا جائز نہ ہوگا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات