عبادات - زکاة و صدقات

Pakistan

سوال # 161106

میرا سوال یہ ہے کہ میری خالہ ہمارے گھر میں کرائے پر رہتی ہیں اور ان کی آمدنی قومی بچت سے ملنے والا منافع سود ہے تو کیا ہماری آمدنی ٹھیک ہے؟

Published on: May 20, 2018

جواب # 161106

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:5786-956-887/M=9/1439



آپ کی خالہ کی آمدنی قومی بچت سے ملنے والا سود ہے اس سے مراد اگر یہ ہے کہ لوگ آپ کی خالہ کو اپنی انٹرسٹ (سود) کی رقم دیتے رہتے ہیں اور خالہ غریب ومستحق زکات ہے اور اسی سودی رقم سے ان کی گذر بسر ہوتی ہے تو جب خالہ سودی رقم لے کر مالک بن جاتی ہے تو ان کو اختیار ہے کہ اس رقم سے لگان کا کرایہ ادا کرے یا اپنے کھانے پینے اور پہننے کی ضروریات میں خرچ کرے، اگر خالہ اسی رقم سے آپ کے مکان کا کرایہ ادا کرتی ہے تو آپ کے لیے لینا جائز ہے، تبدّل ملک سے حکم بدل جاتا ہے اور اگر منشأ سوال کچھ اور ہے تو صورت مسئلہ واضح فرماکر استفتاء کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات