عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 156730

مفتی صاحب، کیا زکات اور صدقہ کے پیسوں سے کچھ خرید کر ہدیہ کے طور پہ مدرسہ میں طلبہ اور اساتذہ کو دے سکتے ہیں؟

Published on: Dec 20, 2017

جواب # 156730

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:348-303/H=3/1439



آپ اگر اپنی زکاة کی رقم دینے کے بجائے ضرورت میں کام آنے والی اشیاء خریدکر مستحقینِ زکاة طلبہ ومصرفِ زکاة اساتذہ کو ہدیہ کے عنوان سے دیدیں تو ان کے قبضہ میں پہنچنے پر زکاة ادا ہوجائے گی، اگر خود آپ کی زکاة نہ ہو بلکہ دیگر کسی شخص کی زکاة ہو تو واضح انداز پر سوٴال دوبارہ بھیجیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات