عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 156718

صدقہ دینے کے حوالے سے مجھے شبہ ہورہاہے کہ میں کس کو صدقہ دوں؟ مسلمانوں کو غیر مسلموں کوبھی صدقہ دوں؟اور صدقہ دینے میں کیا ثواب ہے؟براہ کرم، اس بارے میں بنیادی باتیں بتائیں۔

Published on: Nov 27, 2017

جواب # 156718

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:168-154/sd=3/1439



صدقاتِ واجبہ جیسے زکوٰة وغیرہ غیر مسلم کو دینا جائز نہیں؛ البتہ صدقاتِ نافلہ غیر مسلم کو دے سکتے ہیں لیکن مسلمان کو دینا اولیٰ و بہتر ہے اور احادیث میں صدقہ کے بہت فضائل وارد ہوئے ہیں ، ایک حدیث میں ہے : نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا صدقہ گناہ کو بجھا دیتا ہے جیسے پانی آگ کو بجھا دیتا ہے ۔(ترمذی)ایک دوسری حدیث میں ہے :حضرت ا بو سعید رضی اللہ عنہ کہتے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : پوشیدہ صدقہ اللہ تعالی کے غضب کو ٹھنڈا کرتا ہے ۔ (بیہقی ) (ولا) تدفع (إلی ذمی) لحدیث معاذ (وجاز) دفع (غیرہا وغیر العشر) والخراج (إلیہ) أی الذمی ولو واجبا کنذر وکفارة وفطرةخلافا للثانی وبقولہ یفتی حاوی القدسی وأما الحربی ولو مستأمنا فجمیع الصدقات لا تجوز لہ اتفاقا بحر عن الغایة وغیرہا، لکن جزم الزیلعی بجواز التطوع لہ.( رد المحتار )



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات