عبادات - زکاة و صدقات

india

سوال # 151303

ایک مدرسے کامدرس رمضان میں چندے کا پرسینٹ لیتا ہے ،کیایہ جائزہے ؟ اگر جائزہے تو کتناجائز ہے ؟

Published on: May 18, 2017

جواب # 151303

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 922-838/B=8/1438



مدرسہ کے لیے چندہ کرنا ایک قسم کا اجارہ ہے اور اجارہ میں پہلے سے اجرت کا متعین ہونا ضروری ہے ورنہ اجارہ فاسد ہوجاتا ہے فی صد اجرت دینے میں اجرت متعین نہیں ہوتی کیونکہ چندہ کرنے والوں کو یہ معلوم نہیں ہوتا کہ میں کس قدر رقم وصول کروں گا۔ جب اصل رقم متعین طور پر معلوم نہیں تو اس پر فیصد بھی متعین کرنا ممکن نہیں۔ مدرس کی تنخواہ رمضان میں ڈبل کردیں۔ یا روزانہ ماہانہ اجرت متعین کردیں تو یہ صحیح صورت رہے گی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات