عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 146537

کیا صدقہ اور زکوٰة غیر مسلم کو دینا جائز ہے؟ اور کیا صدقہ کے گوشت کا کچھ حصہ ہم اپنے گھر میں بھی رکھ سکتے ہیں؟ اور کیا صدقہ صرف یتیم اور محتاج کو دینا جائز ہے؟ یا پھر کسی ایسے انسان کو بھی دے سکتے ہیں جس کے گھر میں کمانے والے تو ہوں لیکن غریبی اور بیماری کی مجبوری ہو؟

Published on: Dec 1, 2016

جواب # 146537

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 257-196/L=2/1438



 



(۱) صدقاتِ واجبہ جیسے زکوٰة وغیرہ غیر مسلم کو دینا جائز نہیں؛ البتہ صدقاتِ نافلہ غیر مسلم کو دے سکتے ہیں لیکن مسلمان کو دینا اولیٰ و بہتر ہے۔



(۲) اگر نفلی صدقہ کا گوشت ہے یا قربانی کا گوشت ہے تو اس کو اپنے گھر میں رکھنا اور استعمال میں لانا ردست ہے؛ البتہ نذر وغیرہ کا گوشت خود استعمال کرنا جائز نہیں۔



(۳) جن کے پاس حاجت اصلیہ سے زائد، سونے، چاندی نقدی وغیرہ اتنی مقدار میں نہ ہوں کہ ان کی مالیت نصاب تقریباً ۶۱۳/ گرام چاندی کی مالیت کوپہنچ جائے تو ان کو صدقاتِ واجبہ .زکاة وغیرہ دینا درست ہے اور صدقاتِ نافلہ سے مدد کرنا بہر صورت جائز ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات