India

سوال # 164704

ایک خاتون ہے ، اس کی شادی ہوگئی ہے، اس انڈا نہ بننے کی وجہ سے اولاد نہیں پیدا ہورہی ہے تو اس کے شوہر اس کو طلاق دینے کے لیے کہہ رہے ہیں، اس لیے وہ جاننا چاہ رہی ہے کہ اس کی بہن کا انڈا ٹرانسپلانٹ(لگانا) کرکے اپنے شوہر سے ہمبستر ے تو حمل ٹھہرسکتاہے تو کیا اس حالت میں ٹرانسپلانٹ کرانا جائز ہے ؟ آپ ہمیں اس کا جواب جلد دیں ، کیوں کہ اس کو کبھی کبھی طلاق ہوسکتی ہے؟

Published on: Sep 8, 2018

جواب # 164704

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1399-1275/M=12/1439



حصول اولاد کے لئے مذکورہ طریقہ اختیار کرنا جائز نہیں، انڈا نہ بننے کی وجہ سے استقرار حمل نہیں ہو پارہا ہے تو اس کے لئے کسی ماہر حکیم سے رجوع کیا جائے جائز طریقے پر دوا علاج کرنے میں حرج نہیں، اور مذکورہ خاتون کے شوہر کو یہ بات سمجھائی جائے کہ اولاد کا ہونا یا نہ ہونا یہ اللہ کی چاہت و مشیت پر موقوف ہے۔ بعض مرتبہ شوہر بیوی میں سے کسی کے مادہ منویہ میں کوئی کمی نہیں ہوتی اس کے باوجود اولاد نہیں ہوتی، اللہ جسے چاہتا ہے اولاد دیتا ہے اور جسے چاہتا ہے عقیم (بانجھ ) رکھتا ہے اولاد نہ ہونے کی وجہ سے بیوی کو طلاق دینے کی دھمکی دینا انتہائی جہالت کی بات ہے، شوہر کو ایسا ہرگز نہ کہنا چاہئے۔ اللہ سے اولاد کی دعا کرنی چاہئے اور حصول اولاد کے لئے جائز اسباب و تدابیر اختیار کرنی چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات