Pakistan

سوال # 157385

محترم جناب مفتی صاحب، میرا سوال یہ ہے کہ کوئی شخص شادی کے بعد بچے پیدا نہ کرے تو کیا اس میں کوئی گناہ ہے اگر بیوی بھی اس پر راضی ہو؟

Published on: Jan 2, 2018

جواب # 157385

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:419-305/sn=4/1439



شادی کا اہم مقصد توالد وتناسل ہے؛ اس لیے بلاوجہ بچے کی پیدائش سے رُکنا شرعاً مکروہ وناپسندیدہ ہے، اگر کوئی عذر ہو (مثلاً بیوی کمزور ہو یا عارضی طور پر کسی جگہ آیا ہوا ہو کہ ولادت کی صورت میں پریشانی کا امکان ہو) تو بچے کی پیدائش کوعزل یا کنڈوم وغیرہ استعمال کرکے وقتی طور پر روکنے کی شرعاً گنجائش ہے۔ ویعزل عن الحرّة․․․ بإذنہا لکن في الخانیة أنہ في زماننا لفسادہ إلی آخر ما في ہذا البحث (رد المحتار علی الدر المختار: ۴/ ۳۴۵، ط: زکریا)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات