Pakistan

سوال # 156374

میری رفیق حیات کو اس کی رشتہ دار نے کہا کہ جب ماہواری کے دن ہوں تو کلمہ ۔نماز۔قرآن نہیں پڑھ سکتی مگر زبان سے چھوٹے ذکر وغیرہ کر سکتی ہے ، سوال: ۱۔کیا ایسے ایام میں کوئی ذکر کر سکتی ہے ؟
۲۔ان دنوں میں قضا نمازوں کے بارے میں کیا احکامات ہیں؟ کیا ان کو دوبارہ لوٹانا چاہیں یا وہ معاف ہیں؟
۳۔کیا دل میں ذکر کر سکتا ہے ؟
۴۔کیا ان ایام میں کسی کا کوئی بیان یا قرآن پڑھتے ہوئے سن سکتا ہے یا ایسی محافل میں شرکت کرسکتا ہے قرآن و مستند احادیث و فقہ کی روشنی میں فتوی سے رہنمائی فرما ئیں۔اللہ پاک آپ کو جزائے خیر دے ۔

Published on: Nov 22, 2017

جواب # 156374

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:250-193/L=3/1439



حالتِ حیض ونفاس میں نماز پڑھنا، قرآن کی تلاوت کرنا، روزہ رکھنا منع ہے، روزہ کی قضا کا حکم ہے اور نمازوں کی قضا کا بھی حکم نہیں ہے، اس کے علاوہ زبان یا دل سے ذکر کرنا، بیان یاقرآن سننا وغیرہ جائز ہے۔ وقال: ویجوز للجنب والحائض الدعوات وجواب الأذان ونحو ذلک، کذا في السراجیة․ (الفتاوی الہندیة: ۱/۹۳)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات