Pakistan

سوال # 156372

مندرجہ ذیل کی وضاحت شریعت کی رو سے فرمائیں ،حضرت جنید بغدادی  سے پوچھا گیا کیا کہ کوئی مرد کسی غیر محرم کو پڑھا سکتا ہے ۔فرمایا۔ اگر پڑھانے والا بایزید بسطامی ہو۔ اور پڑھنے والی رابعہ بصری ہو۔ جس جگہ پڑھایا جا رہا ہو وہ بیت اللہ شریف ہو۔اور جو کچھ پڑھایا جا رہا ہو وہ کلام اللہ شریف ہو،پھر بھی اجازت نہیں ہے ۔

Published on: Dec 12, 2017

جواب # 156372

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:248-253/L=3/1439



واقعی ایک مرد کا کسی غیرمحرم مراہقہ یا بالغہ عورت کو پڑھانا انتہائی نازک کام ہے، تاہم اگر کوئی عورت پڑھانے والی نہ ہو تو اس شرط کے ساتھ اس کی اجاز ت ہوگی کہ دونوں کے درمیان پردہ وغیرہ حائل ہو اور کوئی ایسی بات نہ پائی جائے جو موجب فتنہ ہو۔ والذ ی تحصل من ہذا أن الخلوة المحرمة تنتفی بالحائل․․ (شامی: ۹/۵۳۰ط: زکریا دیوبند) جنید بغدادی کے حوالے سے جو بات سوال میں مذکور ہے اس کا ہمیں علم نہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات