India

سوال # 159810

مسجد کے خارجی حصے سے کیا مراد ہے؟ اور کسی بھی مسجد کے خارجی حصے کے بارے میں کیسے پتا لگائیں گے؟

Published on: Apr 10, 2018

جواب # 159810

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:845-803/L=7/1439



مسجد شرعی مسجد کا وہ حصہ ہوتا ہے جو نماز پڑھنے کے لیے مقرر کیا گیا ہو اور نماز کے سوا اس سے کچھ اور مقصود نہ ہو، یعنی مسجد کا اندرونی حصہ برآمدہ اور صحن، اس کو یوں بھی سمجھ سکتے ہیں کہ مسجد میں جس جگہ آپ وضو نہیں کرسکتے، جنابت کی حالت میں وہاں نہیں جاسکتے، وہ جگہ مراد ہے، عموماً جہاں تک مسجد کا صحن کہلاتا ہے، وہاں تک مسجد کی حد ہوا کرتی ہے، واضح رہے کہ مسجد کے مسجد ہونے میں بانیٴ مسجد کی نیت کا اعتبار ہوگا، اور اگر بانی نہ ہو تو قرائنِ عرفیہ کا اعتبار ہوگا۔ امداد الفتاوی میں ہے:



”شرعی مسجد یا حدِ مسجد وہ ہے، جہاں جماعت ہوتی ہے، اور جنبی کا رہنا اور آنا جانا ممنوع وناجائز ہوتا ہے، عموما اس کے تین حصے ہوتے ہیں: (۱) اندر کا مسقّف حصہ (۲) باہر کا دالان یعنی سہ دری (۳) باہر کا غیر مسقف حصہ، جس میں عموماً گرمی میں جماعت ہوتی ہے، چھت کا نہ ہونا، اسے مسجد ہونے سے خارج نہیں کرتا، یہ تینوں عین مسجد ہیں۔ (امداد افتاوی: ۲/ ۶۴۰، بحوالہ آداب الاعتکاف: ۷۶)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات