India

سوال # 154774

محترم مفتی صاحب زید کے پاس ایک زمین ہے ،اس کو کسی نے جعلی کاغذات بنا کر کسی مسجدوالوں کو فروخت کر دی اور زید کو کسی قسم کی خبر نہیں ہوئی اور اس زمیں پر مسجد بنا دی گئی پہر زید اپنی زمین کے اس حال سے واقف ہوا،اب زید اپنی زمین کو واپس لینا چاہ رہا ہے تو سؤال یہ ہے کہ کیا اب زید کو اس کی زیین واپس کرنے کے لئے مسجد کو شہہید کرنا جائز ہے ؟ نیز زید کو اس کی زمین واپس کی جا ئے یا نہیں؟ باحوالہ جواب تحریر فرمائیں عین نوازش ہوگی۔

Published on: Nov 1, 2017

جواب # 154774

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1428-1419/sn=2/1439



جس شخص نے یہ حرکت کی یعنی جعلی کاغذات بناکر زمین مسجد والوں کو فروخت کردی اس نے ایک ناجائز اور بڑے گناہ کا کام کیا، نیز مسجد والوں سے بھی چوک ہوئی ان پر بھی ضروری تھا کہ اولاً کاغذات کی تحقیق کرتے پھر خریداری کا معاملہ کرتے، بہرحال اب جب کہ اس جگہ مسجد تعمیر ہوگئی تو مصلحتاً زمین کے اصل مالک کو چاہیے کہ زمین ہی واپس لینے پر اصرار نہ کرے؛ بلکہ فروخت کنندہ اونر مسجد والوں کے ساتھ بیٹھ کر زمین کی مناسب قیمت طے کرکے وصولی کرلے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات