عقائد و ایمانیات - قرآن کریم

Pakistan

سوال # 163661

قرآن مجید میں آیا ہے جس کا مفہوم کچھ اس طرح ہے کہ کوئی بھی اس جیسی ایک سورت بھی نہیں لاسکتا۔ جبکہ شام کے صدر بشارالاسد نے پورا قرآن مجید جیسا نسخہ الفرقان کے نام سے بنا کر چھپوا دیا ہے ۔ کیا اس طرح قرآن مجید کی صداقت (معاذاللہ)مشکوک نہیں ہوجاتی۔

Published on: Sep 19, 2018

جواب # 163661

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1145-988/SN=1/1440



جی ہاں! قرآن کریم نے آیت کریمہ ”فأتوا بسورة من مثلہ“ (البقرة) میں چیلنج کیا ہے کہ کوئی بھی اس جیسی ایک سورة (خواہ کتنی چھوٹی ہو) بھی نہیں لاسکتا، اور یہ چیلنج بالکل برحق ہے، نہ سابق میں کسی کے بس میں یہ بات رہی کہ قرآن کریم جیسی کوئی کتاب؛ بلکہ اس کی ایک آیت جیسی کوئی آیت لاسکے اور نہ آئندہ کوئی ایسا کرسکے گا، اگر بشار الاسد نے واقعةً یہ ناپاک کوشش کی ہے تو اس کی تیار کردہ کتاب معنویت اور بلاغت وغیرہ میں ہرگز ہرگز قرآن کریم کے برابر، بلکہ اس کے پاسنگ کو بھی نہیں پہونچ سکتی، کفار مکہ وغیرہ میں سے بعض نے بھی اس طرح کی کوشش کی بھی؛ لیکن وہ عاجز رہے، ان کا تیار کردہ کلام قرآن جیسا بالکل نہ ہوسکا جب کہ ان (کفار مکہ وغیرہ) کی بلاغت اور قادر الکلامی معروف تھی، بہرحال اس طرح کی ناپاک کوششوں سے قرآن مجید کی صداقت کسی درجے میں بھی مشکوک نہیں ہوتی؛ بلکہ اور مضبوط ہوتی ہے، اس سلسلے میں مزید تفصیلات کے لئے معارف القرآن سے مذکورہ بالا آیت کی تفسیر کا مطالعہ کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات