عقائد و ایمانیات - قرآن کریم

india

سوال # 148895

میں پہلے قرآن پڑھنے میں بہت سستی کرتا تھا اور اب مجھے بالکل پڑھنے کا دل نہیں کرتا، میں نے اس کے لیے اللہ سے دعا بھی کی مگر ابھی بھی وہی حال ہے، کیا کروں؟

Published on: Mar 7, 2017

جواب # 148895

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 671-576/H=5/1438



گناہوں سے سچی پکی توبہ کریں بالخصوص بدنگاہی اور بدگمانی کی نحوست سے تلاوت قرآن کریم میں رکاوٹ پیدا ہو جاتی ہے دعاء کے ساتھ تقویٰ و طہارت کو لازم پکڑیں اور خواہ کچھ دن طبیعت پر جبر کرکے ہی تلاوت کی جائے مگر اپنے حالات اور مشاغل کو ملحوظ رکھ کر ایک مقدار مقرر کرلیں مثلاً ایک پارہ کی تلاوت طے کرلیں اور پھر دل چاہے نہ چاہے اُس کو ضرور پورا کرلیا کریں اور جب تک تلاوت نہ ہوجائے کھانا نہ کھایا کریں ان شاء اللہ آہستہ آہستہ موجودہ حالت میں تغیر ہوکر تلاوت قرآن کریم میں طبیعت لگنے لگے گی۔ سستی کا علاج بجز ہمت اور چستی کے کچھ نہیں ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات