متفرقات - تصوف

Pakistan

سوال # 68382

میں اپنے دین کی درستگی کے لیے ہمیشہ کوشش کرتا رہتا ہوںِ اسی سلسلے میں ایک دوست تو بہت دین دار اور مخلص ہے کہ نصیحت پر میں نے اس دوست کے شیخ صاحب کے ہاتھ پر بیعت کی۔ میں شیخ صاحب سے نہ ہی واقف ہوں اور نہ پہلے انہیں جانتا تھا، بیعت کے فوراً بعد مجھے ان میں ایک بہت خوفناک بدعت نظر آئی اور میں تب سے ڈرا ہوا ہوں، میں اس بیعت کو منسوخ کرنا چاہتا ہوں، میں نے ان سے درخواست بھی کروائی کہ مجھے وہ اس سے آزاد کر دیں لیکن وہ شاید اس کے لیے تیار نہیں ہیں، مجھے طریقہ بتادیں اور اگر کفارہ ہے تو وہ بھی بتادیں۔

Published on: Aug 18, 2016

جواب # 68382

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 925-749/D=11/1437

شریعت کی پیروی اتباع سنت او ر صلاح و تقویٰ کے اعتبار سے اگر مذکور بزرگ صحیح معلوم ہوتے ہوں تو خوفناک بدعت کیا ہے؟ واضح کریں، اسے کسی عالم کے سامنے ظاہر کرکے مشورہ کریں یا ہمارے یہاں اسے کھول کر لکھیں حکم اور طریقہ بتلا دیا جائے گا اپنی رائے سے کوئی اقدام نہ کریں، اور اگر اتباع شریعت اور صلاح و تقوی کے اعتبار سے بھی وہ متہم ہوں اور بدعت بالکل صاف اور کھلی ہوئی ہو تو آپ خود اپنے فسخ بیعت کی اطلاع انہیں کردیں تعلق ختم ہو جائے گا پھر کسی دوسرے متبع سنت نیک صالح بزرگ سے تعلق قائم کریں اور سابق شیخ کے حق میں سکوت اختیار کریں۔
نوٹ: سابق شیخ سے تعلق بیعت ختم کرنے کے لیے بہر صورت کسی خیر خواہ نیک شخص سے مشورہ کرلیں جیساکہ شروع میں لکھا گیا خود رائی سے پرہیز کریں۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات