متفرقات - تصوف

India

سوال # 167859

میں نے سنا ہے کہ اگر عشاء کی نماز کے بعد تہجد کی نماز پڑھنے سے بھی اسکا وہی ثواب ملتا ہے تو کیا وہی فضائل بھی ملتے ہیں جیسے رزق توبہ اور دعا کی قبولیت؟

Published on: Jan 13, 2019

جواب # 167859

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:388-335/sd=5/1440



افضل یہ ہے کہ نصف شب کے بعد تہجد کی نماز پڑھی جائے ؛ لیکن اگر اخیر رات میں تہجد کے لیے اٹھنا مشکل ہو، تو عشاء کے بعد بھی تہجد کی نیت سے دو چار رکعت نفل پڑھ لینے سے انشاء اللہ تہجد کا ثواب مل جائے گا، عشا کی نماز کے بعد تہجد کا وقت شروع ہوجاتا ہے۔



 عن أیاس بن معاویة المزنی رضی اللّٰہ عنہ أن رسول اللّٰہ صلی اللّٰہ تعالیٰ علیہ وسلم قال: لا بد من صلاة اللیل، ولو حلب شاة، وما کان بعد صلاة العشاء فہو من اللیل( الطبرانی فی الکبیر)روی الطبرانی مرفوعاً: لابد من صلاة بلیل ولو حلب شاة، وما کان بعد صلاة العشاء فہو من اللیل، وہٰذا یفید أن ہٰذہ السنة تحصل بالتنفل بعد صلاة العشاء قبل النوم(رد المحتار۲:۴۶۷، ط: زکریا دیوبند)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات