متفرقات - تصوف

India

سوال # 159696

حضرت میں ۱۸ سالہ لڑکا ہوں مجھ پر شہوت کا بہت غلبہ رہتا ہے ، میں نکاح کرنا چاہتا ہوں لیکن گھر والے ۴-۵ سال کے بعد ہی راضی ہوں گے ، میرا دل زنا کے لیے کہتا ہے لیکن میں یہ حرام کام نہیں کرنا چاہتا ہوں ، الحمدللہ نماز بھی پڑتا ہوں لیکن کیا کروں روزہ نہیں رکھ سکتا ، کام بہت کرنا پڑتا ہے اور طبعیت اچھی نہیں نہیں رہتی۔
براہ کرم کچھ بہتر رہنمائی فرمائیں۔

Published on: Apr 16, 2018

جواب # 159696

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:760-605/sn=7/1439



آپ خود یا کسی قابل اعتماد آدمی کے ذریعے بات کرکے والدین کو آمادہ کرنے کی کوشش کریں اور جب تک وہ آمادہ نہ ہوں ذرا صبر سے کام لیں، شہوت کو ابھارنے والی چیزوں (مثلاً انٹرنیٹ کے استعمال اور تفریحی مقامات پر جانے) سے احتراز کریں، پنج وقتہ نمازیں نیز صبح وشام کی مسنون دعاوٴں کا اہتمام کریں، ان شاء اللہ شہوت پر کنٹرول ہوجائے گی اور آپ گناہوں سے بچ جائیں گے۔ اگر ہوسکے تو قریب کے کسی متبع سنت شیخ اور بزرگ سے اپنا اصلاحی تعلق قائم کرلیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات