معاشرت - طلاق و خلع

india

سوال # 171813

بعدہ عرض بخدمت ہے کہ میرے شوہر محمد لقمان نے مجھ سے کھا جاؤ ہم نے تم کو طلاق دیدی ،اب یہاں نہ رہو اس کے بعد کئی مرتبہ کھاکہ جاؤتم کو طلاق دیدی ،اب تم کو ایسے ہی نکیل کی طرح تم کو رکھے ہیں یعنی نوکرانی کی طرح اور اپنی ماں سے بھی کہا کہ اس کو اس کے گھر پہنچا کے آؤاس کو طلاق دیدی تو کیا میر ی طلاق واقع ہوگئی کہ نہیں اگر طلاق ہوگئی تو کن سی طلاق ہوئی ؟اور میرے لیے شریعت کا کیا حکم ہے؟

Published on: Jul 17, 2019

جواب # 171813

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1108-889/B=11/1440



  طلاق کے سلسلہ میں صرف بیوی کا بیان کافی نہیں ہے اس کے ساتھ شوہر کا بیان ہونا بھی ضروری ہے۔ اگر دو مرد موقعہ پر موجود رہے ہوں تو ان دونوں کا بیان بھی آنا ضروری ہے۔ سب کے بیانات کو دیکھ کر ہی کوئی قطعی جواب لکھا جائے گا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات