معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 168270

کیا عورت ماہواری میں خلاع لے سکتی ہے ؟

Published on: Feb 3, 2019

جواب # 168270

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 680-548/B=05/1440



جی ہاں لے سکتی ہے؛ البتہ وہ حیض عدت کے ۳/حیض میں شمار نہ ہوگا۔ ولا بأس بہ عند الحاجة، قال تحتہ فی رد المختار: ۵/۸۷، کتاب الطلاق، باب الخلع ط: زکریا) : قولہ ”ولا بأس بہ“ أي ولو في حالة الحیض، فلا یکرہ بالاجماع؛ لأنہ لایمکن تحصیل العوض إلا بہ۔ روی عن الامام: أن الخلع لا یکرہ حالة الحیض کذا في فتح القدیر، وذکر الإسبیجابي: أن الخلع لایکرہ ، کما لایکرہ حالة الحیض بالإجماع وعللہ في المحیط بأنہ لایمکن تحصیل العوض إلا بہ ۔ البحر الرائق: ۳/۴۱۸، کتاب الطلاق، ط: زکریا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات