معاشرت - طلاق و خلع

pakistan

سوال # 164589

بغیر طلاق کی نیت منہ سے لفظ طلاق نکل جانے پر کیا حکم ہے ؟ جبکہ بندہ اپنے دوست کی طلاق پر دکھ کر رہا ہو اور کہنے لگے میرے دوست نے کیوں طلاق دی اس جملہ میں سے طلاق کا لفظ منہ سے نکل گیا۔

Published on: Sep 5, 2018

جواب # 164589

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1508-1297/L=12/1439



طلاق کے وقوع کے لیے بیوی کی طرف صراحتاً یا دلالةً طلاق کی نسبت کرنا ضروری ہے،صراحتاً یا دلالةً بیوی کی طرف طلاق کی نسبت کیے بغیرلفظِ ”طلاق “کا تلفظ کرنے سے طلاق واقع نہیں ہوتی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات