معاشرت - طلاق و خلع

pakistan

سوال # 161342

اگر دل ہی دل میں طلاق دے یعنی کہ میں نے طلاق دے دیا۔ لیکن یہیں الفاظ منہ سے نہ بولے بلکہ دل میں طلاق دے تو کیا اس طرح طلاق واقع ہو جا تی ہے ؟

Published on: May 24, 2018

جواب # 161342

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1068-904/sd=9/1439



محض دل میں طلاق دینے سے طلاق نہیں ہوتی، طلاق اس وقت پڑتی ہے جب شوہر زبان سے انشاء طلاق کا لفظ بولے ، اگر آپ نے زبان سے طلاق کا لفظ نہیں بولا ہے تو صرف خیال لانے سے بیوی کو طلاق نہیں پڑی، آپ مطمئن رہیں، آپ کو وسوسے کی شکایت معلوم ہوتی ہے ، اس کے لیے معوذتین (سورہ ناس، سورہ فلق) اور یہ دعا پڑھا کریں: رَبِّ أعُوْذُبِکَ مِنْ ہَمَزَاتِ الشَّیَاطِیْن وَأعُوْذُبِکَ رَبِّ أنْ یَّحْضُرُوْن۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات