معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 161099

میں نے اپنی بیوی کو ۱۸/ جنوری ۲۰۱۸ء کو ایک طلاق احسن دیا اس کے بعد میری بیوی کے میکے والوں نے اس کی شادی کسی اور سے فکس کردی اور دو مارچ بعد جمعہ اس کا نکاح کسی اور سے کردیا، تو کیا اس کا نکاح جائز ہوا یا نہیں؟ اللہ کے واسطے بتایئے۔

Published on: May 13, 2018

جواب # 161099

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:905-734/B=8/1439



طلاق کے بعد مکمل تین حیض عورت کو آنا ضروری ہے، تین حیض آنے کے بعد ہی عدت پوری ہوگی، اس سے پہلے یعنی عدت کے اندر نکاح جائز نہ ہوگا، جو نکاح ہوا وہ اگر عدت کے اندر ہوا تو نکاح صحیح نہ ہوا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات