معاشرت - طلاق و خلع

Pakistan

سوال # 158789

اسلا م علیکم وحمت للہ و بر کاۃ
بیوی کو اگراس کے غلط کردار ( غیر مردوں کے سا ۃ ٹیلی فونک رابطوں اور تعلق کی وجہ سے جن کے نا قا بل ترد ید ثبوت شوھر کے پاس مو جود ھوں ، کیوجہ سے طلاق دی جا یے تو اس صورت میں بھی شریعت کے لحا ظ سے بیوی کو پورا مہر واپس کر د ینا شوھر کے لیے لازمی ٹہرتا ہے کیا ؟ واضح رہے کہ مند ر جہ بالا طلاق سے پھلے بیوی کو اصلاح اور معافی کے کیً بار مو اقع بھی دیے گےً ھوں۔ شرعی حوالہ جات کے ساتھ رھنمایً فرما کر ثواب دارین حاصل کریں
جزاکم اللہ خیر

Published on: Feb 10, 2018

جواب # 158789

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa: 533-430/sd=5/1439



صحبت یا خلوت صحیحہ کے بعد طلاق دینے کی صورت میں شوہر کے ذمہ مہر کی ادائے گی ضروری ہوتی ہے ، خواہ بیوی کے غلط کردار کی وجہ سے طلاق دی جائے ،بیوی کے غلط کردار کی وجہ سے طلاق دینے کی وجہ سے شوہر کے ذمہ سے مہر معاف نہیں ہو تا۔ 



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات