معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 148688

میں نے اپنی بیوی سے کہا کہ میں نے تجھے چھوڑ دیا اور الگ الگ مجلس میں بولا، اور اس سے طلاق کی نیت تھی تو آیا اس طریقہ سے طلاق واقع ہوگی یا نہیں؟براہ کرم جواب دیں ۔

Published on: Feb 23, 2017

جواب # 148688

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 449-442/B=5/1438



اگر الگ الگ مجلس میں یا ایک مجلس میں تین مرتبہ یہ جملہ بولا ہے تو اس کی بیوی پر تین طلاق مغلظہ واقع ہوگئیں، ”میں نے تجھے چھوڑدیا“ کا لفظ در اصل کنایہ میں سے تھا مگر عرف عام میں طلاق کے معنی میں مستعمل ہونے لگا، اس لیے اب یہ طلاق صریح کے معنی میں مستعمل ہونے لگا۔ شامی میں ہے: وإذا قال رہا کردم أي سرحتک یقع بہ الرجعي مع أن أصلہ کنایة أیضًا وما ذاک إلا لأنہ غلب في عرف الفرس استعمالہ في الطلاق وقد مر أن الصریح ما لم یستعمل إلا في الطلاق من أي لغةٍ کانت․ (ج۲/ ۵۰۳، کوئٹہ)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات