معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 148020

تقربیا ً سو دنوں سے اگر بیوی شوہر سے بات نہ کرے اور شوہر کے ساتھ کوئی تعلق نہ رکھے جب کہ وہ ایک ہی مکان میں رہتی ہے تو کیا ان حالات سے شریعت کے مطابق خو د بخود طلاق ہوجاتی ہے؟

Published on: Feb 7, 2017

جواب # 148020

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa ID: 330-311/N=5/1438



اگر ایک مکان میں رہتے ہوئے میاں بیوی کے درمیان ۱۰۰/ دن یا کم وبیش مدت تک زوجیت کا کوئی تعلق قائم نہ ہو؛ بلکہ دونوں ایک دوسرے سے بالکل الگ رہیں، لیکن شوہر نے عورت کو کوئی طلاق نہ دے ، نیز شرعی پنچایت کے ذریعے شرعی طریقہ پر دونوں کا نکاح فسخ بھی نہ ہو تو محض ایک دوسرے سے الگ تھلگ رہنے اور زوجیت کا رشتہ قائم نہ کرنے سے عورت پر کوئی طلاق واقع نہیں ہوتی،وہ حسب سابق اپنے شوہر کی بیوی برقرار رہتی ہے (فتاوی محمودیہ ۱۲: ۲۵۱ - ۲۵۳، سوال: ۶۰۲۵، ۶۰۲۶، مطبوعہ: ادارہٴ صدیق ڈابھیل)۔ قولہ: ”ورکنہ لفظ مخصوص“ھو ما جعل دلالة علی معنی الطلاق من صریح أو کنایة الخ (رد المحتار، أول کتاب الطلاق، ۴:۴۳۱، ط: مکتبة زکریا دیوبند) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات