عبادات - طہارت

United Arab Emirates

سوال # 3462

ایک شخص رات کو الکوحل پتیا ہے اور صبح نماز پڑھتاہے۔ اسے یہ کہنے پر کہ کم ازکم کپڑے بدل لیا کرو تو وہ کہتا ہے کہ کپڑے پر شراب نہیں گری ہے اس لیے یہ پاک ہیں۔ کیا وہ صحیح کہا رہاہے؟ وہ نماز کا پابند ہے ، لیکن رات کو شراب پیتاہے۔ اللہ اس کو بچائے! آمین

Published on: Apr 12, 2008

جواب # 3462

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 370/ ج= 256/ ج


 


اگر کپڑے کی طہارت کا یقین ہو تو پھر اس میں نماز پڑھنے میں کوئی مضائقہ نہیں گو بہتر یہ ہے کہ دوسرے پاک کپڑے پہن کر نماز پڑھے۔ یہ شخص اگر یکبارگی الکوحل چھوڑ نہیں سکتا تو آہستہ آہستہ چھوڑدینا چاہیے جسے اللہ تعالیٰ نے نماز جیسی پاکیزہ عبادت کی پابندی کی توفیق مرحمت فرمائی ہو اسے کب یہ زیب دیتا ہے کہ وہ الکوحل جیسی بے کار چیز کی لت میں گرفتار ہو جو انسان کو عقل و ہوش اور شرافت کے لباس سے باہر کرنے والی ہو۔


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات