عبادات - طہارت

pakistan

سوال # 175899

علما سے سنا ہے کہ جب مذی نکلتی ہے تو غسل کی ضرورت نہیں ہوتی پر وضو کرنا چا ہیے ، سوال یہ ہے کہ مذی تو بار بار نکلتی رہتی ہے تو کیا بار بار وضو کرنا پڑے گا؟

Published on: Jan 12, 2020

جواب # 175899

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 456-416/M=05/1441



یہ صحیح ہے کہ مذی کے نکلنے سے صرف وضو ٹوٹتا ہے، غسل واجب نہیں ہوتا، اگر کسی کو بار بار مذی نکلنے کی شکایت ہے تو اس کی صحیح نوعیت لکھ کر سوال کرنا چاہئے کہ کس درجہ نکلنے کی شکایت ہے، اگر شرعی عذر کی حد تک نہیں ہے تو جب بھی مذی نکلے گی، اس کا وضو ٹوٹ جائے گا۔ اس شخص کو کسی اچھے حکیم یا ڈاکٹر سے اس کا علاج کرانا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات