عبادات - طہارت

Pakistan

سوال # 167241

اگر زکام کی وجہ سے یا رونے کی وجہ سے ناک سے پیلے رنگ کی رطوبت آجائے تو کیا وہ ناپاک ہوتی ہے اس سے وضو ٹوٹ جاتا ہے ؟

Published on: Jan 7, 2019

جواب # 167241

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:352-310/N=4/1440



زکام یا تیز مرچ کا کھانا کھانے یا رونے وغیرہ کی وجہ سے ناک سے پیلے رنگ کی جو رطوبت نکلتی ہے، وہ ناپاک نہیں، اُس کے نکلنے سے وضو نہیں ٹوٹتا۔



الماء إذا اختلط بالمخاط أو البزاق جاز بہ التوضوٴ ویکرہ (الفتاوی الخانیة علی ھامش الفتاوی الھندیة، کتاب الطھارة، فصل فیما لا یجوز بہ التوضي،۱: ۱۸، ط: المطبعة الکبری الأمیریة، بولاق، مصر)، في البزازیة: وتکرہ الصلاة مع الخرقة التي یمسح بھا العرق ویوٴخذ بھا المخاط لا لأنھا نجسة الخ (رد المحتار، کتاب الحظر والإباحة، فصل في اللبس، ۹: ۵۲۲، ط: مکتبة زکریا دیوبند)، اتفق الفقہاء علی أن المخاط طاھر وأن الصلاة في ثوب فیہ مخاط صحیحة لحدیث: ”فإذا تنخع أحدکم فلیتنخع عن یسارہ تحت قدمہ، فإن لم یجد فلیتفل ھکذا -وصفہ الراوي- فتفل في ثوبہ ثم مسح بعضہ ببعض“ (الموسوعة الفقہیة، ۳۶: ۲۵۸، ۲۵۹، ط: الکویت)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات