عبادات - طہارت

Pakistan

سوال # 157839

حضرت، میرے اکاوٴنٹ میں کچھ انٹریسٹ آیا ہے۔ مجھے ضرورت پڑی تو میں نے پورا پیسہ سوائے سودی پیسے کے نکال لیا۔ تو بینک نے میرے اکاوٴنٹ میں سے کم سے کم بیلنس (minimum balance) نہ ہونے کی وجہ سے پیسہ سودی بیلنس سے کٹنا شروع کردیا یہاں تک کہ پورا پیسہ کاٹ لیا۔ تو کیا اب مجھے وہ سودی پیسہ اپنی طرف سے ہٹانا ضروری ہوگا؟ یا وہ بینک پہلے ہی واپس لے چکی ہے، اب ضرورت نہیں؟

Published on: Jan 2, 2018

جواب # 157839

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:2189-357/sd=4/1439



اگر آپ کا دایاں ہاتھ بازو سے کٹا ہوا ہے ، تو ضرورت کے وقت( یعنی : اگر وضوء کرنے پر قدرت نہ ہو ، خواہ بیماری کی وجہ سے یا پانی نہ ملے کی وجہ سے ) بائیں ہاتھ کا تیمم کسی دوسرے سے کرالیں یا بایاں ہاتھ تیمم کی نیت سے دیوار یا مٹی کے ڈھیلے وغیرہ پر مل لیں ، اس سے بھی تیمم صحیح ہوجائے گا ۔ قال ابن عابدین:(قولہ ولو من غیرہ) فلو أمر غیرہ بأن ییممہ جاز بشرط أن ینوی الآمر بحر.( رد المحتار :۲۳۷/۱، باب التیمم، ط: دار الفکر، بیروت )یستفاد : ولو شلت یداہ یمسح یدہ علی الأرض ووجہہ علی الحائط ویجزیہ ولا یدع الصلاة. ہکذا فی الذخیرة فی الفصل الخامس قبیل فصل التیمم.( الفتاوی الہندیة : ۲۶/۱)۔ قال ابن عابدین : (قولہ: وبوجہہ جراحة) قید بہ؛ لأنہ لو کان سلیما مسحہ علی الجدار بقصد التیمم ط۔ ( رد المحتار : ۸۰/۱۔ کتاب الطہارة ، ط: دار الفکر، بیروت ) عمدة الفقہ :۲۴۲/۱، ۲۴۳، ط:زوار اکیڈمی، کراچی ) 



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات