عبادات - صوم (روزہ )

United Arab Emirates

سوال # 3079

اگر کوئی شخص رمضان میں بیوی کے ساتھ جماع کے ذریعہ روزہ توڑدے، تو اس کا کفارہ کیا ہے؟ اور اللہ سے وہ اس کی توبہ کیسے کرے؟

Published on: Nov 28, 2007

جواب # 3079

بسم الله الرحمن الرحيم


فتوی: 677/ ج= 672/ ج


 


اگر شوہر بیوی دونوں رمضان کا روزہ رکھے ہوئے تھے اور دونوں نے جان بوجھ کر بلاعذر شرعی جماع کے ذریعہ روزہ توڑدیا تو دونوں کے ذمہ قضا اور کفارہ لازم ہیں، کفارہ یہ ہے کہ شوہر بیوی دونوں دو دو مہینے کے روزے مسلسل رکھیں اور ایک روزہ قضا کا رکھیں۔ اگر درمیان میں وقفہ ہوگیا تو پھر نئے سرے سے شروع کریں، البتہ عورت کو حیض کی وجہ سے جو وقفہ کرنا پڑے وہ معاف ہے، اگر روزہ رکھنے کی طاقت ہے تو ساٹھ دن پے درپے روزے رکھنا لازم ہے اور روزے کی طاقت نہیں تو دونوں وقت ساٹھ ساٹھ مسکینوں کو کھانا کھلائیں اور اللہ سے اپنی غلطی اور گناہ کی معافی بھی مانگیں اور آئندہ ایسی غلطی سے بچیں۔ قال في الدر المختار: وإن جامع المکلف آدمیًا أداء أو جومع أو توارت الحشفة في أحد السبیلین․․․ عمداً قضی و کفّر․․․“


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات