عبادات - صوم (روزہ )

pakistan

سوال # 168537

کیا نسوار منہ میں رکھنے روز ٹوٹتا ہے جو عام طور پر نشہ کے لیے استغمال ہوتا ہے ؟

Published on: Feb 21, 2019

جواب # 168537

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:538-443/sn=6/1440



 جی! ہاں، منہ میں نسوار رکھنے اور اس کانشہ لینے سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے ؛ کیوں کہ منہ میں نسوار رکھنا عملاً کھانے کے حکم میں ہے (فتاوی عثمانی۲/۱۹۲،مطبوعہ: مکتبہ معارف القرآن کراچی) نیز عام طور پر نسوار کا کچھ حصہ دماغ اور پیٹ میں ضرور پہنچ جاتا ہے اور نسوار اور اس جیسی نشیلی چیزوں میں دماغ یا پیٹ کی طرف کھنچنے کی صلاحیت بھی پائی جاتی ہے ۔ (دیکھیں :فتاوی دارالعلوم دیوبند،۶/۲۶۴، ط:کراچی)



(و)کرہ (مضغ علک) أبیض ممضوغ ملتئم، وإلا فیفطر،..... (قولہ: وکرہ مضغ علک) نص علیہ مع دخولہ فی قولہ وکرہ ذوق شیء ومضغہ بلا عذر؛ لأن العذر فیہ لایتضح، فذکر مطلقا بلا عذر اہتماما رملی. قلت: ولأن العادة مضغہ خصوصا للنساء؛ لأنہ سواکہن کما یأتی فکان مظنة عدم الکراہة فی الصیام لتوہم أن ذلک عذر (قولہ أبیض إلخ) قیدہ بذلک؛ لأن الأسود وغیرالممضوغ وغیر الملتئم، یصل منہ شیء إلی الجوف، وأطلق محمد المسألة وحملہا الکمال تبعا للمتأخرین علی ذلک قال للقطع بأنہ معلل بعدم الوصول، فإن کان مما یصل عادةً حکم بالفساد؛ لأنہ کالمتیقن.( الدرالمختار وحاشیة ابن عابدین (رد المحتار) ۳/۴۱۶، ط:زکریا)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات