عبادات - صوم (روزہ )

India

سوال # 163568

اگر کسی کے رمضان کے روزے قضا ہوں تو کیا وہ شوال کے نفلی روزے کا رکھ سکتا ہے؟

Published on: Jul 25, 2018

جواب # 163568

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1291-1098/SD=11/1439



 اگر کسی شخص کے رمضان کے روزے قضاء ہوں، تو وہ شوال کے چھ نفلی روزے رکھ سکتا ہے ؛ البتہ بہتر یہ ہے کہ پہلے قضاء روزے رکھے ، پھر نفلی روزے اور اگر کوئی شخص شوال کے نفل روزوں میں رمضان کے قضا روزوں کی نیت کرتاہے ، تو اس صورت میں رمضان کے قضا روزے ہی ادا ہوں گے ، نفلی روزے اداء نہیں ہوں گے ۔



وإذا نوی قضاء بعض رمضان والتطوع یقع عن رمضان فی قول أبی یوسف رحمہ اللہ تعالی ، وہو روایة عن أبی حنیفة رحمہ اللہ تعالی ، کذا فی الذخیرة ۔ (الفتاوی الہندیة: ۱۹۷/۱، کتاب الصوم ، الباب الأول فی تعریفہ وتقسیمہ وسببہ ووقتہ وشرطہ)وإذا نوی فرضا ونفلا فہو مفترض کما إذا نوی الظہر والتطوع بتحریمة واحدة أو الصوم عن القضاء والتطوع۔ ۔ ۔ فإنہ یصیر شارعا فی الفرض وتبطل نیة التطوع عند أبی یوسف وہو روایة الحسن عن الإمام ترجیحا للفرض بقوتہ أو حاجتہ إلی التعیین فیلغو ما لا یحتاج إلی التعیین ویعتبر ما یحتاج إلیہ۔ ( البحر الرائق )



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات