عبادات - صوم (روزہ )

Pakistan

سوال # 163398

پاخانہ کرتے وقت مقعد کا کافی حصہ باہر نکل آتا ہے اور استنجاء کے بعد انگلیوں سے دبا کر اوپر اندر کو چڑھانا پڑتا ہے ۔برائے مہربانی وضاحت فرما دیں کہ اس سے روزہ میں کوئی خلل واقع ہوتا ہے یا نہیں.... آپ کا شکریہ ہوگا۔

Published on: Oct 14, 2018

جواب # 163398

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1062-1082/SN=1/1440



فقہاء نے صراحت کی ہے کہ اگر موضع حقنہ تک تر انگلی مقعد میں داخل کی جائے تو روزہ ٹوٹ جاتا ہے اور موضع حقنہ کی مقدار چار پانچ انگل بتلائی گئی ہے، صورت مسئولہ میں غالباً انگلیاں اتنا اندر نہیں جاتی ہیں، اگر واقعہ بھی یہی ہو تو آپ نے جو صورت ذکر کی ہیں اس میں روزہ ٹوٹنے کا حکم نہ ہوگا۔ ․․․․ أو أدخل أصبعہ الیابسة فیہ أي دبرہ أو فرجہا ولو مبتلة فسد ․․․․ لبقاء شيء من البلة فی الداخل، وہذا لو أدخل الأصبع إلی موضع المحقنة کما یعلم بعدہ الخ (درمختار مع الشامی: ۳/۳۶۹، ط: زکریا)۔ نیز دیکھیں: امداد الاحکام (۲/۱۲۸، ط: کراچی)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات