عبادات - صوم (روزہ )

Pakistan

سوال # 162890

اگر عورت سستی یا کسی اور وجہ سے گھر میں تراویح کی نماز ادا نہ کرتی ہو لیکن اگر مسجد یا کسی اور جگہ جہاں عورتوں کی جماعت کا اہتمام ہوتا ہووہاں جا کر تراویح ادا کرنا آسان لگتا ہو تو کیا عورت تراویح کی جماعت میں شرکت کے لیئے جا سکتی ہے ؟

Published on: Jul 7, 2018

جواب # 162890

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1103-971/D=10/1439



عورتوں کو پنجوقتہ نماز کے لیے مسجد جانے کی اجازت نہیں ہے تو تراویح کے لیے کیسے اجازت ہوسکتی ہے۔یہی حکم کسی مکان میں عورتوں کے ساتھ جمع ہوکر تراویح پڑھنے کا انتظام واہتمام کرنے کا ہے، اگر عورت امامت کرے تو مکروہ تحریمی ہے اگر مرد امامت کرے اور عورتیں سب نامحرم ہوں تو بھی مکروہ ہے۔ اگر نامحرم عورتوں کے ساتھ کچھ محرم عورتیں بھی ہوں تو گنجائش ہے، اگر عورتوں کے ساتھ مرد بھی ہوں اور مردوں کی صف کے پیچھے عورتوں کی صف لگے تو نیز بیچ میں پردہ بھی ہو تو جائز تو ہے لیکن خلاف احتیاط اور خلاف توارث ہے۔ لہٰذا عورت کو گھر ہی میں چستی اور ہمت کے ساتھ الم تر کیف سے تراویح ادا کرلینا چاہیے باہر نہ جائیں۔



اور اگر کوئی محرم جیسے باپ، بیٹا، بھائی، بھانجہ وغیرہ امام ہوجائے تو پھر جماعت سے ادا کرلینے کی گنجائش ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات