عبادات - صوم (روزہ )

Pakistan

سوال # 14002



کسی
عورت نے سترہ یا اٹھارہ سال کی عمر سے روزہ رکھنا شروع کیا پہلے کے روزوں کی قضا
کیسے ادا کرنی ہوگی جب کہ ناپاکی میں رہ جانے والے روزے بھی یاد نہ ہوں کہ کتنے
چھوٹے تھے؟



Published on: Jun 16, 2009

جواب # 14002

بسم الله الرحمن الرحيم



فتوی:
1000=1000/م



 



بالغ
ہونے کے بعد شریعت کے احکام مثلاً نماز، روزے وغیرہا فرض ہوجاتے ہیں، البتہ عورت
کے لیے ناپاکی کے ایام میں روزے رکھنا ممنوع ہے، لیکن بعد میں ان کی قضا لازم ہے،
صورت مسئولہ میں جس عورت نے سترہ یا اٹھارہ سال کی عمر میں روزہ رکھنا شروع کیا تو
اس کو یہ یاد کرنے کی ضرورت نہیں کہ ناپاکی میں کتنے روزے چھوٹے ہیں کیوں کہ اگر
وہ سترہ سال سے پہلے ایک بھی روزہ نہیں رکھتی تھی تو اس کے حق میں پاکی، ناپاکی کے
ایام برابر ہیں، ایسی عورت کو صرف یہ طے کرنا ہے کہ وہ بالغ کس عمر میں ہوئی ہے،
اگر یہ طے ہوجائے کہ مثلاً عورت چودہ سال کی عمر میں رمضان آنے سے قبل ہوگئی تھی اور
روزہ رکھنا شروع کیا سترہ یا اٹھارہ سال کی عمر سے، تو اس کے ذمہ تین یا چار سال
کے رمضان کے روزوں کی قضا لازم ہوگی۔




واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات