عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 9409

ایک امام صاحب ہیں جن سے مقتدی خوش نہیں ہیں، مقتدی ان کو ہٹانا چاہتے ہیں پر وہ چودھری بنے بیٹھے ہیں اورہٹنے پر بالکل آمادہ نہیں ہیں۔ کافی کبیرہ گناہوں کے مرتکب ہیں چونکہ ساری باتیں لکھنا مشکل ہے لہذاآپ شرائط بتادیجئے جس کی بنا پر امام کو امامت سے ہٹایا جاسکتا ہے؟

Published on: Dec 25, 2008

جواب # 9409

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 1257=1257/ م


 

امامت کسی کی جاگیر نہیں ہے، امامت ایک عظیم دینی منصب ہے، جس کا استحقاق،تقویٰ، طہارت، صلاح و کمال، علم وعمل جیسے اوصاف حمیدہ کی بنا پر ہوتا ہے، اور جو امام فسق و فجور اور کبائر میں مبتلا ہوجائے اور اپنے افعال سے توبہ نہ کرے، اس کو معزول کرکے کسی لائق امامت، متبع سنت شخص کو امام بنانا چاہیے، سوال مذکور میں امام صاحب سے مقتدیوں کے ناخوش رہنے کی وجوہات اور امام صاحب کے ذاتی احوال کی تفصیل مذکور نہیں،اس لیے ان کی امامت کے متعلق حکم تحریر کرنا دشوار ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات