عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 6542

کیا ہم ایک جگہ پر ایک وقت کی دو جماعتیں بنا سکتے ہیں؟ مثلاً کچھ لوگ آئے اور انھوں نے جماعت سے نماز پڑھی پھر بیس منٹ کے بعد کچھ لوگ آئے انھوں نے بھی جماعت بنائی۔ توکیا ایسا کرنا درست ہے؟ اور اگر یہ مکروہ ہے تو کیا صرف ایسا کرنا خاص مسجد کے لیے مکروہ ہے یا ہر جگہ دوجماعت بنانا مکروہ ہے؟

Published on: Aug 3, 2008

جواب # 6542

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 1162=1093/ د


 


ایسی مسجد جہاں کے مقتدی و امام مقرر ہیں جو مقررہ وقت پر نماز ادا کرلیتے ہیں، اس مسجد میں ایک مرتبہ جماعت ہوجانے کے بعد دوسری جماعت کرنا مکروہ تحریمی ہے، البتہ مسجد کے حدود سے باہر (یعنی جو حصہ مسجد سے خارج ہے، مثلاً سہ دری وغیرہ) یا مسجد کے علاوہ باہر کسی کمرہ وغیرہ میں دوسری جماعت کرسکتے ہیں، لیکن مسجد کی جماعت بلا عذر ترک کرنے سے مسجد کا ثواب نہیں ملے گا، صرف جماعت کا ثواب ملے گا۔


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات