عبادات - صلاة (نماز)

Pakistan

سوال # 175783

میرا سوال یہ ہے کہ مجھے بہت عرصہ پہلے کسی کی بابت پتہ چلا کہ ظہر کی چار سنت سے پہلے چار اور سنت پڑھی تو حدیث میں آتا ہے کہ اس کا پڑھنا ایسے ہے جیسے تہجد کی نماز پڑھی ہو کیا واقعی حدیث سے یہ بات ثابت ہے ؟

Published on: Jan 21, 2020

جواب # 175783

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 415-342/D=05/1441



یہ فضیلت ظہر سے قبل چار رکعت سنت کی ہے، نہ کہ ان چار رکعت سنت سے پہلے مزید چار رکعت پڑھنے کی۔ عن البراء بن عازب، عن النبي - صلی اللہ علیہ وسلم - قال: من صلی قبل الظہر أربع رکعات کمن تہجد بہن من لیلہ، ومن صلاہن بعد العشاء کنّ مثلہن من لیلة القدر ۔ (مجمع الزوائد: ۲/۲۲۰-۲۲۱، رقم: ۳۳۲۲) ۔



ترجمہ: حضرت براء بن عازب سے روایت ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: جو ظہر سے پہلے چار رکعت پڑھے تو وہ اس شخص کی طرح ہے جس نے تہجد کی چار رکعتیں پڑھی ہوں۔ اور جو عشاء کے بعد چار رکعت پڑھے تو ایسا ہے جیسے لیلة القدر میں چار رکعت پڑھی ہوں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات