عبادات - صلاة (نماز)

India

سوال # 175679

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ایک شخص نے چار رکعت نفل نماز کی نیت کی اور کسی وجہ سے نیت توڑ دی تو کیا اس شخص پر چار رکعت نفل پڑھنا واجب ہے یا نہیں ؟برائے کرم اس مسئلہ کا جواب عنایت فرمائیں۔

Published on: Feb 1, 2020

جواب # 175679

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:352-315/sd=6/1441



اگر چار رکعت کی نیت سے نفل نماز شروع کی تھی ، پھر دو رکعت سے پہلے نیت توڑدی، تو صرف دو رکعت کی قضاء لازم ہوگی،چار رکعت کی نہیں۔



قال ابن عابدین: (قولہ:لزم نفل الخ )أی : لزم المضی فیہ حتی اذا أفسدہ لزم قضاوٴہ ھی قضاء رکعتین وان نوی أکثر۔ ( رد المحتار: ۲/۴۷۴، زکریا، دیوبند) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات